218

تیرے عشق نچائیاں کر کے تھیا تھیا!​

مورت ،عارف علی

تیرے عشق نچائیاں کر کے تھیا تھیا!​

تیرے عشق نے ڈیرا میرے اندر کیتا​
بھر کے زہر دا پیالہ، میں تاں آپے پیتا​
جھب دے بوہڑیں وے طبیبا، نہیں تے میں مر گئیا​
تیرے عشق نچائیاں کر کے تھیا تھیا!​

اپنی رائے دا اظہار کرو